عادتوں کا سنوارنا

کھانے پینے کا بیان

ادب بسم اللہ کر کے کھانا شروع کرو اور داہنے ہاتھ سے کھاؤ اور اپنے سامنے سے کھاؤ۔ البتہ اگر اس برتن میں کئی قسم کی چیز ہے جیسے کئی طرح کا پھل کئی طرح کی شیرینی ہو اس وقت جس چیز کو جی چاہے جس طرف سے چاہو اٹھا لو۔ ادب انگلیاں چاٹ لیا کرو اور برتن میں اگر سالن ہو چکے تو اس کو بھی صاف کر لیا کرو۔ ادب اگر لقمہ ہاتھ سے چھوٹ جائے اس کو اٹھا کر صاف کر کے کھا لو شیخی مت کرو۔ ادب خربوزے کی بھانکیں ہیں یا کھجور وانگور کے دانے ہیں یا مٹھائی کی ڈلیاں ہیں تو ایک ایک اٹھاؤ۔ دو دو ایکدم سے مت لو۔ ادب اگر کوئی چیز بدبودار کھائی ہو جیسے کچا پیاز لہسن تو اگر محفل میں بیٹھنا ہو پہلے منہ صاف کر لو کہ بدبو نہ رہے۔ ادب روز کے خرچ کے لیے آٹا چاول ناپ تول کر پکاؤ اندھا دھند مت اٹھاؤ۔ ادب کھا پی کر اللہ تعالی کا شکر کرو۔ ادب کھانے سے پہلے اور کھانے کے بعد ہاتھ دھو لو اور کلی بھی کر لو۔ ادب بہت جلتا کھانا مت کھاؤ۔ ادب مہمان کی خاطر کرو۔ اگر تم مہمان جاؤ تو اتنا مت ٹھہرو کہ دوسرے کو بوجھ لگنے لگے۔ ادب کھانا مل کر کھانے سے برکت ہوتی ہے۔ ادب جب کھانا کھا چکو اپنے اٹھنے سے پہلے دسترخوان اٹھوا دو۔ اس سے پہلے خود اٹھنا بے ادبی ہے اور اگر اپنی ساتھن سے پہلے کھا چکو تب بھی اس کا ساتھ دو۔ تھوڑا تھوڑا کھاتی رہو تاکہ وہ شرم کے مارے بھوکی نہ اٹھ جائے۔ اور اگر کسی وجہ سے اٹھنے ہی کی ضرورت ہو تو اس سے عذر کر دو۔ ادب مہمان کو دروازے کے پاس تک پہنچانا سنت ہے۔ ادب پانی ایک سانس میں مت پیو تین سانس لینے کے وقت برتن منہ سے جدا کر دو اور بسم اللہ کر کے پیو اور پی کر الحمد للہ کہو۔ ادب جس برتن سے زیادہ پانی جانے کا شبہ ہو یا برتن کے اندر کا حال معلوم نہ ہو کہ اس میں شاید کوئی کیڑا کانٹا ہو ایسے برتن سے منہ لگا کر پانی مت پیو۔ ادب بے ضرورت کھڑے ہو کر پانی مت پیو۔


ادب پانی پی کر اگر دوسروں کو بھی دینا ہو تو جو تمہارے داہنی طرف ہو اس کو پہلے دو اور وہ اپنے داہنی طرف والی کو دے۔ اسی طرح اگر کوئی اور چیز بانٹنا ہو جیسے پان عطر مٹھائی سب کا یہی طریقہ ہے۔ ادب جس طرف سے برتن ٹوٹ رہا ہے ادھر سے پانی مت پیو۔ ادب شروع شام کے وقت بچوں کو باہر مت نکلنے دو۔ اور شب کو بسم اللہ کر کے دروازے بند کر لو اور بسم اللہ کر کے برتنوں کو ڈھانک دو اور چراغ سوتے وقت گل کر دو۔ اور چولہے کی آگ بجھا دو یا دبا دو۔ ادب کھانے پینے کی چیز کسی کے پاس بھیجنا ہو تو ڈھانک کر بھیجو۔


پہننے اوڑھنے کا بیان

ادب ایک جوتی پہن کر مت چلو۔ رضائی وغیرہ اس طرح مت لپیٹو کہ چلنے میں یا جلدی سے ہاتھ نکالنے میں مشکل ہو۔ ادب کپڑا داہنی طرف سے پہننا شروع کرو۔ مثلاً داہنی آستین داہنا پائنچہ داہنی جوتی اور بائیں طرف سے نکالو۔ ادب کپڑا پہن کر یہ دعا پڑھو گناہ معاف ہوتے ہیں۔ الحمدللہ الذی کسانی ہذا ورزقنیہ من غیر حول منی لا قوۃ۔ ادب ایسا لباس مت پہنو جس میں بے پردگی ہو۔ ادب جو امیر عورتیں بہت قیمتی پوشاک اور زیور پہنتی ہیں ان کے پاس زیادہ مت بیٹھو خواہ مخواہ دنیا کی ہوس بڑھے گی۔ ادب پیوند لگانے کو ذلت مت سمجھو۔ ادب کپڑا نہ بہت تکلف کا پہنو اور نہ میلا کچیلا پہنو۔ بیچ کی راس رو اور صفائی رکھو۔ ادب بالوں میں تیل کنگھی کرتی رہو مگر ہر وقت اسی دھن میں مت لگی رہو۔ ہاتھوں میں مہندی لگاؤ۔ ادب سرمہ تین تین سلائی دونوں آنکھوں میں لگاؤ۔ ادب گھر کو صاف رکھو۔


بیماری اور علاج کا بیان

ادب بیمار کو کھانے پینے پر زیادہ زبردستی مت کرو۔ ادب بیماری میں بدپرہیزی مت کرو۔ ادب خلاف شرع تعویذ گنڈہ ٹوٹکہ ہرگز استعمال مت کرو۔ ادب اگر کسی کو نظر لگ جائے تو جس پر شبہ ہو اس کی نظر لگی ہے اس کا منہ اور دونوں ہاتھ کہنی سمیت اور دونوں پاؤں اور دونوں زانو اور استنجے کا موقع دھلوا کر پانی جمع کر کے اس شخص کے سر پر ڈال دو جس کی نظر لگی ہے انشاء اللہ تعالی شفاء ہو جائے گی۔ ادب جن بیماریوں سے دوسروں کو نفرت ہوتی ہے جیسے خارش یا خون بگڑ جانا ایسے بیمار کو چاہیے کہ خود سب سے الگ رہے تاکہ کسی کو تکلیف نہ ہو۔


خواب دیکھنے کا بیان

ادب اگر ڈراونا خواب نظر آئے تو بائیں طرف تین بار تھتکار دو اور تین بار اعوذ باللہ من الشیطان الرجیم پڑھو اور کروٹ بدل ڈالو اور کسی سے ذکر مت کرو انشاء اللہ تعالی کوئی نقصان نہ ہو گا۔ ادب اگر خواب کہنا ہو تو ایسے شخص سے کہو جو عقل مند یا تمہارا چاہنے والا ہو تا کہ بری تعبیر نہ دے۔ ادب جھوٹا خواب بنانا بڑا گناہ ہے۔


سلام کرنے کا بیان

ادب آپس میں سلام کیا کرو اس طرح السلام علیکم اور جواب اس طرح دیا کرو وعلیکم السلام اور سب طریقے واہیات ہیں۔ ادب جو پہلے سلام کرے اس کو زیادہ ثواب ملتا ہے۔ ادب جو کوئی دوسرے کا سلام لائے یوں جواب دو علیہم وعلیم السلام ادب اگر کئی آدمیوں میں سے ایک نے سلام کر لیا تو سب کی طرف سے ہو گیا۔ اسی طرح ساری محفل میں سے اسی نے جواب دے دیا وہ بھی سب کی طرف سے ہو گیا اضافہ ہاتھ کے اشارے سے سلام کے وقت جھکنا منع ہے اگر کوئی شخص دور ہو اور تم اس کو سلام کر دیا وہ تم کو سلام کرے تو پھر ہاتھ سے اشارہ کرنا جائز ہے لیکن زبان سے بھی سلام کے الفاظ کہنے چاہئیں مسلمانوں کے جو بچے سرکاری سکولوں میں پڑھتے ہیں ان کو بھی انگریزی یا ہندوانہ طریق سے سلام نہ کرنا چاہیے بلکہ شرعی طریقے پر استادوں وغیرہ کو سلام کرنا چاہیے۔ اگر استاد کافر ہو تو اس کو صرف سلام یا السلام علی من اتبع الہدی کہنا چاہیے کافروں کے لیے السلام علیکم کے الفاظ نہ استعمال کرنے چاہئیں سب مسلمانوں کے لیے یہی حکم ہے۔


بیٹھنے لیٹنے چلنے کا بیان

ادب بن ٹھن کر اتراتی ہوئی مت چلو۔ ادب الٹی مت لیٹو۔ ادب ایسی چھت پر مت سو جس میں آڑ نہ ہو شاید لڑھک کر گر پڑو۔ ادب کچھ دھوپ میں کچھ سایہ میں مت بیٹھو۔ ادب اگر تم کسی لاچاری کو باہر نکلو تو سڑک کے کنارے کنارے چلو۔ بیچ میں چلنا عورت کے لیے بے شرمی ہے۔


سب میں مل کر بیٹھنے کا بیان

ادب کسی کو اس کی جگہ سے اٹھا کر خود وہاں مت بیٹھو۔ ادب کوئی عورت محفل سے اٹھ کر کسی کام کو گئی اور عقل سے معلوم ہوا کہ ابھی پھر آئے گی۔ ایسی حالت میں اس جگہ کسی اور کو نہ بیٹھنا چاہیے وہ جگہ اسی کا حق ہے۔ ادب اگر دو عورتیں ارادہ کر کے محفل میں پاس پاس بیٹھی ہوں تو ان کے بیچ میں جا کر مت بیٹھو۔ البتہ اگر وہ خوشی سے بٹھلا لیں تو کچھ ڈر نہیں ادب جو عورت تم سے ملنے آئے اس کو دیکھ کر ذرا اپنی جگہ سے کھسک جاؤ جس میں وہ یہ جانے کہ میری قدر کی۔ ادب محفل میں سردار بن کر مت بیٹھو جہاں جگہ ہو غریبوں کی طرح بیٹھ جاؤ۔ ادب جب چھینک آئے منہ پر کپڑا یا ہاتھ رکھ لو اور پست آواز سے چھینکو۔ ادب جمائی کو جہاں تک ہو سکے روکو۔ اگر نہ رکے تو منہ ڈھانک لو۔ ادب بہت زور سے مت ہنسو۔ ادب محفل میں ناک منہ چڑھا کر منھ پھلا کر مت بیٹھو۔ عاجزی سے غریبوں کی طرح بیٹھو۔ کوئی بات موقع کی ہو بول چال بھی لو۔ البتہ گناہ کی بات مت کرو۔ ادب محفل میں کسی طرح پاؤں مت پھیلاؤ۔


زبان کے بچانے کا بیان

ادب بے سوچے کوئی بات مت کہو سوچ کر یقین ہو جائے کہ یہ بات کسی طرح بری نہیں تب بولو۔ ادب کسی کو بے ایمان کہنا یا یوں کہنا کہ فلانی پر خدا کی مار خدا کی پھٹکار خدا کا غضب پڑے دوزخ نیب ہو خواہ آدمی کو خواہ جانور کو یہ سب گناہ ہے جس کو کہا گیا ہے اگر وہ ایسا نہ ہوا تو یہ سب پھٹکار لوٹ کر اس کہنے والی پر پڑتی ہے۔ ادب اگر تم کو کوئی بیجا بات کہے بدلے میں اتنا ہی کہہ سکتی ہو اگر ذرا بھی زیادہ کہا پر تم گنہگار ہو گی۔ ادب دوغلی بات منہ دیکھے کی مت کرو کہ اس کے منہ پر اس کی سی اور اس کے منہ پر اس کی سی۔ ادب چغلخوری ہرگز مت کرو نہ کسی کی چغلی سنو۔ ادب جھوٹ ہرگز مت بولو۔


ادب خوشامد سے کسی کی منہ پر تعریف مت کرو اور پیٹھ پیچھے بھی حد سے زیادہ تعریف مت کرو۔ ادب کسی کی غیبت ہرگز بیان مت کرو اور غیبت یہ ہے کہ کسی کے پیٹھ پیچھے اس کی ایسی بات کہنا کہ اگر وہ سنے تو اس کو رنج ہو چاہے وہ بات سچی ہی ہو۔ اور اگر وہ بات ہی غلط ہے تو وہ بہتان ہے اس میں اور بھی زیادہ گناہ ہے۔ ادب کسی سے بحث مت کرو اپنی بات کو اونچی مت کرو۔ ادب زیادہ مت ہنسو اس سے دل کی رونق جاتی رہتی ہے۔ ادب جس شخص کی غیبت کی ہے اگر اس سے معاف نہ کرا سکو تو اس شخص کے لیے دعائے مغفرت کیا کرو۔ امید ہے کہ قیامت میں معاف کر دے۔ ادب جھوٹا وعدہ مت کرو۔ ادب ایسی ہنسی مت کرو جس سے دوسرا ذلیل ہو جائے۔ ادب اپنی کسی چیز یا کسی ہنر پر بڑائی مت جتلاؤ۔ ادب شعر اشعار کا دھندا مت رکھو البتہ اگر مضمون خلاف شرع نہ ہو اور تھوڑی سی آواز سے کبھی کبھی کوئی دعا یا نصیحت کا شعر پڑھ لو تو ڈر نہیں۔ ادب سنی سنائی ہوئی باتیں مت کہا کرو۔ کیونکہ اکثر ایسی باتیں جھوٹی ہوتی ہیں۔

متفرق باتوں کا بیان

ادب خط لکھ کر اس پر مٹی چھوڑ دیا کرو اس سے اس کام میں آسانی ہوتی ہے جس کام کے لیے خط لکھا گیا ہو۔ ادب زمانے کو برا مت کہو۔ ادب باتیں بہت چھپا کر مت کرو نہ کلام میں بہت طول یا مبالغہ کیا کرو۔ ضرورت کے قدر بات کرو۔ ادب کسی کے گانے کی طرف کان مت لگاؤ۔ ادب کسی کی بری صورت یا بری بات کی نقل مت اتارو۔ ادب کسی کا عیب دیکھو تو اس کو چھپاؤ گاتی مت پھرو۔ ادب جو کام کرو سوچ کر انجام سمجھ کر اطمینان سے کرو جلدی میں اکثر کام بگڑ جاتے ہیں۔ ادب کوئی تم سے مشورہ لے تو وہی صلاح دو جس کو اپنے نزدیک بہتر سمجھتی ہو۔ ادب غصہ جہاں تک ہو سکے روکو۔ ادب لوگوں سے اپنا کہا سنا معاف کرا لو ورنہ قیامت میں بڑی مصیبت ہو گی۔ ادب دوسروں کو بھی نیک کام بتلاتی رہو۔ بری باتوں سے منع کرتی رہو۔ البتہ اگر بالکل قبول کرنے کی امید نہ ہو یا اندیشہ ہو کہ یہ ایذاء پہنچائے گا تو خاموشی جائز ہے مگر دل سے بری بات کو بری سمجھتی رہو اور بدون لاچاری کے ایسے آدمیوں سے نہ ملو۔

مولانا اشرف علی تھانوی
اپریل ۲۰۱۹
اسلامی عقائد اور عمل پر فقہ کی ایک جامع کتاب۔